Uncategorized

سٹہ مافیا چینی کی بوریوں پر نہیں واٹس ایپ پر کام کرتا ہے ، شہزاد اکبر

پنجاب میں 10،8 بڑے پلیئر چینی کی قیمت طے کرتے ہیں،سٹہ مافیا سے متعلق لاکھوں کی تعداد میں دستاویزات ملی ہیں ، سٹے بازوں نے پہلے سے طے کیا تھا کہ اپریل میں چینی کا ریٹ کیا ہوگا ، ایف آئی اے سٹہ مافیا کیخلاف 12 سے زائد ایف آئی آر درج کرچکا ہے ، معاون خصوصی برائے احتساب کی گفتگو

بوریوالہ : (زی این این) گزشتہ سال ماہ جنوری میں راؤ فرحان نائب صدر MSMبوریوالہ پر ایک شرپسند طلبہ تنظیم کی طرف سے فائرنگ کی گئی تھی جس کے نتیجے میں راؤ فرحان شدید زخمی ہوگئے بعدازاں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے شہید ہوگئے۔ گزشتہ روز راؤ فرحان کیس کے حوالے سے عدالت میں پیشی تھی۔پیشی میں دونوں تنظیمات کے کارکن موجود تھے۔ انتظامیہ کی نااہلی، غلطی اورناقص سیکورٹی انتظامات کی وجہ سے شرپسند طلبہ تنظیم کی طرف سے ایک دفعہ پھر شرارت کی گئی اور MSM کے کارکنان کو اشتعال دلانے کی کوشش کی گئی۔ معمولی سی چپکلش کے بعد معاملہ رفع دفع ہوگیا۔اس چپکلش میں نہ ہی کسی کے پاس اسلحہ تھا،نا فائرنگ ہوئی اورنہ ہی کوئی زخمی ہوا۔
۔بغیر کسی وارنٹ گرفتاری کے پولیس نے گھریلو سامان کی توڑ پھوڑ، گھر میں موجود افرادکو زدو کوب اور خواتین کو غلیظ گالیاں دیتے ہوئے گرفتاریاں کی ہیں۔چپکلش کے دوران موقع پر صرف 2کارکن موجود تھے جبکہ پولیس نے جھوٹ کا سہارا لیا ہے اورایف آئی آر میں باقی کارکنوں کے نام بے بنیادڈالے ہیں۔
مصطفوی سٹوڈنٹس موومنٹ نے اول دن سے “علم، امن، روادری، محبت،بھائی چارے”کا درس دیا ہے اور ہمیشہ کارکنوں کی تربیت میں یہ عنصر شامل رکھا ہے کہ آپ نے احیاے اسلام، استحکام پاکستان اور عوامی مسائل کے لیے جدوجہدکرنی ہے۔یہ کیسے ہو سکتا ہے کہ مصطفوی سٹوڈنٹس موومنٹ کے کارکن دہشتگردی جیسی غلیظ اور نا پاک حرکت کریں جبکہ ہم نے تو ہمیشہ دہشتگردوں کی مخالفت کی ہے اور ہر محاذ پر ان کا مقابلہ کیا ہے۔
پولیس کا فرض عین تھا کہ وہ بہتر انتظامات کرتی اور اپنی نا اہلی کو قبول کرتے ہوئے کارکنا ن جو اپنے شہید کے انصاف کے لیے عدالتوں کے چکر پہ چکر لگا رہے ہیں ان کو ان کو دہشتگرد ڈکلیئر کرنے کی بجائے ان کوتحفظ فراہم کرتی۔کارکنان پہلے ہی اپنے شہیدکے انصاف میں تاخیر کی وجہ سے غم و غصہ کی حالت میں تھے اب پولیس کی طرف سے یہ حرکت کرکے غم و غصہ کومزید بھڑکایا گیا ہے۔ہمارا مطالبہ ہے کہ انتظامہ ہوش کے ناخن لے اور اپنی غلطی کو مانتے ہوئے فی الفور ایف آئی آر کو خارج کرے نہیں تو کارکنان MSMسراپا احتجاج ہوں گے اس کے بعد انتظامیہ کے لیے حالات کو کنٹرول کرنا مشکل ہوجائے گا۔
الحمداللہ انسداد دہشتگردی عدالت ملتان نے معصوم طلبہ پر دھشت گردی کی دفعات (7ATA) کو ختم کر دیا ہے۔
جس پر ہم معزز عدلیہ کا شکریہ ادا کرتے ہیں۔اب ہمارا ڈی پی او وہاڑی سے مطالبہ ہے کہ بقیہ دفعات کو بھی ختم کیا جائے اور گرفتار طلبہ کو باعزت بری کیا جائے اور اس جھوٹی ایف آئی آر کو درج کرنے پر ملوث اہلکاروں کیخلاف محکمانہ کاروائی کی جائے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button
Open chat
Need help ?