پاکستان

دہشتگردوں کےخاتمےتک چین سے نہیں بیٹھیں گے،آرمی چیف

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کا کہنا ہے کہ دہشت گردوں اور ان کے سہولت کاروں کو کیفر کردار تک پہنچانے تک چین سے نہیں بیٹھیں گے۔ دہشت گردی کا کوئی مذہب نہیں ہوتا۔ پشاور ميں مدرسے پر حملہ دراصل اسلام دشمنی ہے۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ ( آئی ایس پی آر) کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے بدھ 28 اکتوبر کو پشاور اور دیر بالا ملاکنڈ ڈویژن کا دورہ کیا۔ اس موقع پر آرمی چیف نے لیڈی ریڈنگ اسپتال میں مدرسہ دھماکے میں زخمی ہونے والوں کی عیادت بھی کی۔

آئی ایس پی آر کے مطابق جنرل باجوہ نے شہداء کے ورثاء سے بھر پور یکجہتی کا بھی اظہار کیا۔ سپہ سالار کا کہنا تھا کہ متاثرین میں افغان مہاجرین کے بچوں کی بھی بڑی تعداد شامل ہے۔ دہشت گردی سے لڑتے پاکستان، افغانستان کا دکھ سانجھا اور دشمن بھی ایک ہے۔ دونوں برادر ملکوں کا امن ایک دوسرے سے جڑا ہے۔ دونوں طرف عوام کے دل ساتھ دھڑکتے ہیں۔

سپہ سالار نے یہ بھی واضح کیا کہ دہشت گردی کا کوئی مذہب نہیں ہوتا۔ افغان مہاجرین نادانستگی میں کہیں دہشت گرد کارروائیوں میں استعمال نہ ہوجائیں، انہیں دُشمن قوتوں سے چوکنا اور دور رہنا ہوگا۔ بے امنی اور انتشار دونوں ممالک کیلئے خطرناک ہے۔ دونوں برادر ملک اس کے متحمل نہیں ہوسکتے۔

سرحدی علاقے اپر دیر مالاکنڈ پہنچنے پر جنرل قمر باجوہ کو کامیابیاں مستحکم کرنے کی کارروائیوں اور بارڈر منیجمنٹ پر بریفنگ عسکری حکام کی جانب سے بریفنگ بھی دی گئی۔ علاقے میں قیام امن اور سنگلاخ و دشوار گزار علاقے میں باڑ لگانے پر فورسز کی کارکردگی کو سراہا۔ دورے کے دوران پاک افغان سرحدی باڑ کو دہشت گردوں کی نقل و حمل روکنے والی امن کی دیوار بھی قرار دیا گیا

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button
Open chat
Need help ?