پاکستان

گندم کی امدادی قیمت میں300 روپےفی من اضافے کا امکان

ملک میں گندم کی امدادی قیمت میں 300 روپے فی من تک اضافے کا امکان ہے۔قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی تجارت نے سپورٹ پرائس کا اعلان جلد کرنے پر زور دیا ہے۔وزارت غذائی تحفظ کےحکام نے بتایا ہے کہ امدادی قیمت کیلئےتجاویزدینےمیں سندھ سب سے پیچھے رہ گیا ہے۔

امدادی قیمت میں 300 روپے فی من تک اضافے کی امید بڑھ گئی ہے۔ اس حوالے سےقومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی تجارت میں متعلقہ وزارت نے عندیہ دے دیا ہے۔

اجلاس میں وزارت قومی غذائی تحفظ نے بتایا کہ گذشتہ برس کسانوں سے گندم 1400 روپے فی من خریدی گئی،اوپن مارکیٹ میں قیمت 2400 روپے فی من ہے جبکہ درآمدی گندم 2000 روپے فی من میں دستیاب ۔حکومت چاہتی ہے کہ امدادی قیمت 1600 سے 1700 روپے فی من ہو۔

اس سلسلے میں سمری تیار بھی کرلی گئی ہے جس کی حتمی منظوری ای سی سی دے گی۔کمیٹی چیئرمین نوید قمر نے کہا ہےکہ نجی شعبہ اور سرکاری لوگ پیسہ بنا رہے ہیں،سپورٹ پرائس کا اعلان فوری کیا جانا چاہیئے۔

کمیٹی کو بریفنگ کے دوران گندم کی ذخیرہ اندوزی اور تقسیم کے مسائل کو مہنگائی کی بڑی وجہ قراردیا گیا۔

اجلاس کو یہ بھی بتایا گیا کہ امدادی قیمت کے تعین کیلئے پنجاب،خیبر پختوانخوا اور بلوچستان تو تجاویز دے چکے ہیں البتہ سندھ نے تجاویز ابھی تک نہیں دیں جس پر نوید قمر نے کہا ہے کہ اس حوالےسے وہ سندھ حکومت سے خود بات کرینگے

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button
Open chat
Need help ?