75

اہل علم تنگ نظر نہیں ہو سکتےڈاکٹر حسن محی الدین قادری

علماء اختلاف رائے کا فراخ دلی سے سامنا کریں: ڈاکٹر حسن محی الدین قادری

اہل علم تنگ نظر نہیں ہو سکتے: چیئرمین سپریم کونسل کی علماء سے ملاقات

حضور نبی اکرم ﷺ خندہ پیشانی کے ساتھ ہر ایک کی بات سنتے تھے: گفتگو اسلام آباد( زی این این ) 22جنوری 2022ء منہاج القرآن انٹرنیشنل کی سپریم کونسل کے چیئرمین ڈاکٹر حسن محی الدین قادری نے علمائے کرام کے وفد سے ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ تنگ نظری اور عدم برداشت سب سے بڑا خطرہ ہیں۔ علمائے کرام اختلاف رائے کا فراخ دلی کے ساتھ سامنا کریں، علمائے حق کبھی تنگ نظر نہیں ہوسکتے۔ حضور نبی اکرم ﷺ

خندہ پیشانی کے ساتھ ہرایک کی بات سنتے تھے اور کبھی ناگواری کا اظہار نہیں فرماتے تھے۔ آپﷺ کی مجلس کا یہ حسن ہوتا تھا کہ اس مجلس میں بیٹھنے والا ہر شخص دل کی بات بے خوف و خطر کرتا تھا اور اس کی بات سنی جاتی تھی اگر اس مبارک سنت کو ہم اپنی زندگی اور مزاج پر نافذ کر لیں تو سارے جھگڑے ختم ہو جائیں گے،

علمائے کرام کے وفد نے حافظ محمد خلیل قادری کی قیادت میں ملاقات کی۔ اس موقع پر ناظم اعلیٰ نظام المدارس پاکستان علامہ میر آصف اکبر،علامہ محمد اقبال اکبر قادری، خالد محمود منہاجین، مقبول حسین طاہر، عدنان وحید قاسمی، محمد زمان قادری موجود تھے،ڈاکٹر حسن محی الدین قادری نے کہا کہ اختلاف رائے اس انداز کے ساتھ ہونا چاہیے کہ آپس کے خوشگوار تعلقات خراب نہ ہوں۔ انہوں نے کہا کہ قرآن مجید نے اُمت محمدیہ کو اعتدال والے رویے کی حامل امت قرار دیا ہے جو کسی بھی معاملے میں حد سے تجاوز نہیں کرتی اس لئے ضروری ہے کہ میانہ روی اور اعتدال کے ساتھ معاملات کو چلایا اور نبھایا جائے۔ اعتدال پر مبنی رویوں کو فروغ دینا علمائے کرام کی دینی، قومی و انسانی ذمہ داری ہے۔ انہوں نے کہا کہ شیخ الاسلام ڈاکٹر محمد طاہرالقادری نے کبھی ردعمل میں علمی جوابات نہیں دئیے۔ انتہائی نازک حالات میں بھی انہوں نے قرآن و سنت کی تعلیمات اور ائمہ محدثین اور اسلاف کی فکر وطریق کے مطابق کسی کی دل آزاری کیے بغیر اپنا علمی نقطہ نظر پیش کیا اور کبھی فروعی ابحاث اور تنقید کو درخوراعتنا نہیں جانا۔ انہوں نے کہا کہ علم سے محبت رکھنے والے انسانیت سے بے لوث محبت کرتے ہیں۔ اسلام نے باہمی احترام اور رواداری کی تعلیمات پر سب سے زیادہ زور دیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں